Ubqari®

عالمی مرکز امن و روحانیت
اعلان!!! نئی پیکنگ نیا نام فارمولہ،تاثیر اور شفاءیابی وہی پرانی۔ -- اگرآپ کو ماہنامہ عبقری اور شیخ الوظائف کے بتائے گئے کسی نقش یا تعویذ سے فائدہ ہوا ہو تو ہمیں اس ای میل contact@ubqari.org پرتفصیل سے ضرور لکھیں ۔آپ کے قلم اٹھانے سے لاکھو ں کروڑوں لوگوں کو نفع ملے گا اور آپ کیلئے بہت بڑا صدقہ جاریہ ہوگا. - مزید معلومات کے لیے یہاں کلک کریں -- تسبیح خانہ لاہور میں ہر ماہ بعد نماز فجر اسم اعظم کا دم اور آٹھ روحانی پیکیج، حلقہ کشف المحجوب، خدمت والو ں کا مذاکرہ، مراقبہ اور شفائیہ دُعا ہوتی ہے۔ روح اور روحانیت میں کمال پانے والے ضرور شامل ہوں۔۔۔۔ -- تسبیح خانہ لاہور میں تبرکات کی زیارت ہر جمعرات ہوگی۔ مغرب سے پہلے مرد اور درس و دعا کے بعد خواتین۔۔۔۔ -- حضرت حکیم صاحب دامت برکاتہم کی درخواست:حضرت حکیم صاحب ان کی نسلوں عبقری اور تمام نظام کی مدد حفاظت کا تصور کر کےحم لاینصرون ہزاروں پڑھیں ،غفلت نہ کریں اور پیغام کو آگے پھیلائیں۔۔۔۔ -- پرچم عبقری صرف تسبیح خانہ تک محدودہے‘ ہر فرد کیلئے نہیں۔ماننے میں خیر اور نہ ماننے میں سخت نقصان اور حد سے زیادہ مشکلات،جس نے تجربہ کرنا ہو وہ بات نہ مانے۔۔۔۔ --

عیادت مریض ضروری ہے (عبیدالرحمن شمسی‘ پشاور )

ماہنامہ عبقری - ستمبر 2010ء

حضرت انس رضی اللہ عنہ سے مروی ہے کہ حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جس نے وضو کیا اور اچھے طریقے سے وضو کیا (فرائض‘ سنت‘ مستحبات) کا خیال رکھا اور اپنے بھائی کی عیادت کی اس کا مقصود صرف اور صرف اللہ کی رضا ہو یہ جہنم سے ساٹھ سال کی مسافت کے بقدر دور ہوگیا تمام احباب ماہنامہ عبقری! السلام علیکم و رحمتہ اللہ وبرکاتہ جو کسی مسلمان کی عیادت کرتا ہے اللہ تعالیٰ کے اس پر کتنے انعامات ہوتے ہیں اس کا اندازہ آپ حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم کے فرامین سے خود لگالیں گے۔ حضرت ابو موسیٰ اشعری رضی اللہ عنہ سے روایت ہے‘ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا بھوکے کو کھلاو ‘ مریض کی عیادت کرو اور ناحق (بے گناہ) قیدی کو آزاد کراو۔ اسی طرح ایک دوسرے موقع پر حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا ہر مسلمان کے دوسرے مسلمان پر پانچ حقوق ہیں‘ سلام کا جواب دینا‘ مریض کی عیادت کرنا‘ جنازے کے ساتھ چلنا‘ دعوت کا قبول کرنا اور چھینک کا جواب دینا‘لہٰذا اس سے معلوم ہوا کہ ایک مسلمان کا دوسرے مسلمان پر دیگر حقوق کے علاوہ ایک حق یہ بھی ہے کہ جب کوئی مسلمان بیمار ہو تو دوسرے مسلمان پر اس کی عیادت لازم اور ضروری ہے۔ ہر ایک کی عیادت کرو اگرچہ وہ تمہاری عیادت نہ کرتا ہو مقصود صرف اور صرف اللہ کی رضا ہو‘ دنیاوی غرض نہ ہو تب اس پر اجر ملتا ہے۔ لہٰذا بیہقی میں حضور اقدس صلی اللہ علیہ وسلم کی روایت منقول ہے کہ اس شخص کی بھی عیادت کرو جو تمہاری عیادت نہیں کرتا اور اس شخص کو ہدیہ دو جو تم کو ہدیہ نہیں دیتا۔ اس حدیث کا مقصد یہ ہے کہ اگر ایک شخص نے دوسرے بھائی کی بیمار پرسی نہیں کی تو اس نے ایک جرم کیا ہے تو اب دوسرے کو نہیں چاہے کہ اس سے تعلق منقطع کردے بلکہ ایسا طرز عمل اختیار کرے جس سے اخوت وبھائی چارہ میں اضافہ ہو اور کدورتیں اور رنجشیں دور ہوں۔ عیادت مریض کا ثواب حضرت انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا جس نے وضو کیا اور اچھے طریقے سے وضو کیا (فرائض‘ سنت‘ مستحبات) کا خیال رکھا اور اپنے بھائی کی عیادت کی اس کا مقصود صرف اور صرف اللہ کی رضا ہو تو یہ جہنم سے ساٹھ سال کی مسافت کے بقدر دور ہوگیا۔ (مشکوٰة) آپ اندازہ لگائیں کہ اللہ تبارک وتعالیٰ خالصتاًعیادت پر کتنا عظیم اجر عطا فرماتے ہیں۔ اگر مسلمان اس جذبے کے تحت عیادت مریض کرے تو عام معاشرے پر اس کے کتنے خوشگوار اثرات مرتب ہوں گے۔ ایک دوسرے مقام پر حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ بے شک جب ایک مسلمان دوسرے مسلمان بھائی کی عیادت کرتا ہے تو یہ جنت کی ہواوں میں ہوتا ہے جب تک واپس لوٹ نہیں آتا۔ (مسلم ) سبحان اللہ کتنا بڑا اجر صرف اس سنت کے عمل پر ملتا ہے۔ اسی طرح ایک اور موقع پر حضور صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا جب کوئی مریض کی عیادت کرتا ہے تو ایک غیبی آواز کرنے والا آواز کرتا ہے تو نے اچھا کیا اور تمہارے قدم مبارک ہوں تو نے اپنے لیے جنت میں جگہ تیار کرلی۔ (ابن ماجہ) عیادت کرنے والے پر ملائکہ کی دعا حضرت علی رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ میں نے حضور صلی اللہ علیہ وسلم سے سنا انہوں نے فرمایا صبح کے وقت کوئی مسلمان کسی مسلمان کی عیادت کرتا ہے تو ستر ہزار فرشتے شام تک اس کیلئے مغفرت کی دعا کرتے رہتے ہیں اسی طرح شام کے وقت کسی مسلمان کی عیادت کرتا ہے تو صبح تک ستر ہزار فرشتے اس کیلئے مغفرت کی دعائیں کرتے رہتے ہیں۔ عیادت سے اللہ کو پالینا یقینی جب آدمی خالصتاً لوجھہ اللہ مریض کی بیمار پرسی کرتا ہے ہے تو وہاں اللہ یعنی اس کی رضا کو پالیتا ہے ۔حضور سرور کونین صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ بروز قیامت اللہ تبارک و تعالیٰ فرمائیں گے اے ابن آدم! میں مریض ہوا تو نے میری بیمار پرسی نہیں کی۔ ابن آدم کہے گا میں کیسے آپ کی بیمار پرسی کرتا آپ تو رب العالمین ہیں۔ اللہ تعالیٰ فرمائیں گے تجھے معلوم نہیں میرا فلاں بندہ بیمار تھا اگر تو اس کی عیادت کرتا تو مجھے وہاں پالیتا۔ (مسلم شریف) مریض کے سامنے کیا کہنا چاہیے حضرت ابن عباس رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں کہ حضور سرور کونین صلی اللہ علیہ وسلم ایک اعرابی کی بیمار پرسی کیلئے داخل ہوئے تو فرمایا ”کوئی فکر نہیں انشاءاللہ شفاءہوگی۔“
Ubqari Magazine Rated 5 / 5 based on 722 reviews.